اردو(Urdu) English(English) عربي(Arabic) پښتو(Pashto) سنڌي(Sindhi) বাংলা(Bengali) Türkçe(Turkish) Русский(Russian) हिन्दी(Hindi) 中国人(Chinese) Deutsch(German)
2024 02:41
مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کا خاتمہ بھارت کی سپریم کورٹ کا غیر منصفانہ فیصلہ خالصتان تحریک! دہشت گرد بھارت کے خاتمے کا آغاز سلام شہداء دفاع پاکستان اور کشمیری عوام نیا سال،نئی امیدیں، نیا عزم عزم پاکستان پانی کا تحفظ اور انتظام۔۔۔ مستقبل کے آبی وسائل اک حسیں خواب کثرت آبادی ایک معاشرتی مسئلہ عسکری ترانہ ہاں !ہم گواہی دیتے ہیں بیدار ہو اے مسلم وہ جو وفا کا حق نبھا گیا ہوئے جو وطن پہ نثار گلگت بلتستان اور سیاحت قائد اعظم اور نوجوان نوجوان : اقبال کے شاہین فریاد فلسطین افکارِ اقبال میں آج کی نوجوان نسل کے لیے پیغام بحالی ٔ معیشت اور نوجوان مجھے آنچل بدلنا تھا پاکستان نیوی کا سنہرا باب-آپریشن دوارکا(1965) وردی ہفتۂ مسلح افواج۔ جنوری1977 نگران وزیر اعظم کی ڈیرہ اسماعیل خان سی ایم ایچ میں بم دھماکے کے زخمی فوجیوں کی عیادت چیئر مین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کا دورۂ اُردن جنرل ساحر شمشاد کو میڈل آرڈر آف دی سٹار آف اردن سے نواز دیا گیا کھاریاں گیریژن میں تقریبِ تقسیمِ انعامات ساتویں چیف آف دی نیول سٹاف اوپن شوٹنگ چیمپئن شپ کا انعقاد یَومِ یکجہتی ٔکشمیر بھارتی انتخابات اور مسلم ووٹر پاکستان پر موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات پاکستان سے غیرقانونی مہاجرین کی واپسی کا فیصلہ اور اس کا پس منظر پاکستان کی ترقی کا سفر اور افواجِ پاکستان جدوجہدِآزادیٔ فلسطین گنگا چوٹی  شمالی علاقہ جات میں سیاحت کے مواقع اور مقامات  عالمی دہشت گردی اور ٹارگٹ کلنگ پاکستانی شہریوں کے قتل میں براہ راست ملوث بھارتی نیٹ ورک بے نقاب عز م و ہمت کی لا زوال داستا ن قائد اعظم  اور کشمیر  کائنات ۔۔۔۔ کشمیری تہذیب کا قتل ماں مقبوضہ جموں و کشمیر کی خصوصی حیثیت کا خاتمہ اور بھارتی سپریم کورٹ کی توثیق  مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کا خاتمہ۔۔ایک وحشیانہ اقدام ثقافت ہماری پہچان (لوک ورثہ) ہوئے جو وطن پہ قرباں وطن میرا پہلا اور آخری عشق ہے آرمی میڈیکل کالج راولپنڈی میں کانووکیشن کا انعقاد  اسسٹنٹ وزیر دفاع سعودی عرب کی چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی سے ملاقات  پُرعزم پاکستان سوشل میڈیا اور پرو پیگنڈا وار فئیر عسکری سفارت کاری کی اہمیت پاک صاف پاکستان ہمارا ماحول اور معیشت کی کنجی زراعت: فوری توجہ طلب شعبہ صاف پانی کا بحران،عوامی آگہی اور حکومتی اقدامات الیکٹرانک کچرا۔۔۔ ایک بڑھتا خطرہ  بڑھتی آبادی کے چیلنجز ریاست پاکستان کا تصور ، قائد اور اقبال کے افکار کی روشنی میں قیام پاکستان سے استحکام ِ پاکستان تک قومی یکجہتی ۔ مضبوط پاکستان کی ضمانت نوجوان پاکستان کامستقبل  تحریکِ پاکستان کے سرکردہ رہنما مولانا ظفر علی خان کی خدمات  شہادت ہے مطلوب و مقصودِ مومن ہو بہتی جن کے لہو میں وفا عزم و ہمت کا استعارہ جس دھج سے کوئی مقتل میں گیا ہے جذبہ جنوں تو ہمت نہ ہار کرگئے جو نام روشن قوم کا رمضان کے شام و سحر کی نورانیت اللہ جلَّ جَلالَہُ والد کا مقام  امریکہ میں پاکستا نی کیڈٹس کی ستائش1949 نگران وزیراعظم پاکستان، وزیراعظم آزاد جموں و کشمیر اور  چیف آف آرمی سٹاف کا دورۂ مظفرآباد چین کے نائب وزیر خارجہ کی چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی سے ملاقات  ساتویں پاکستان آرمی ٹیم سپرٹ مشق 2024کی کھاریاں گیریژن میں شاندار اختتامی تقریب  پاک بحریہ کی میری ٹائم ایکسرسائز سی اسپارک 2024 ترک مسلح افواج کے جنرل سٹاف کے ڈپٹی چیف کا ایئر ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد کا دورہ اوکاڑہ گیریژن میں ''اقبالیات'' پر لیکچر کا انعقاد صوبہ بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں مقامی آبادی کے لئے فری میڈیکل کیمپس کا انعقاد  بلوچستان کے ضلع خاران میں معذور اور خصوصی بچوں کے لیے سپیشل چلڈرن سکول کاقیام سی ایم ایچ پشاور میں ڈیجٹلائیز سمارٹ سسٹم کا آغاز شمالی وزیرستان ، میران شاہ میں یوتھ کنونشن 2024 کا انعقاد کما نڈر پشاور کورکا ضلع شمالی و زیر ستان کا دورہ دو روزہ ایلم ونٹر فیسٹول اختتام پذیر بارودی سرنگوں سے متاثرین کے اعزاز میں تقریب کا انعقاد کمانڈر کراچی کور کاپنوں عاقل ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کوٹری فیلڈ فائرنگ رینج میں پری انڈکشن فزیکل ٹریننگ مقابلوں اور مشقوں کا انعقاد  چھور چھائونی میں کراچی کور انٹرڈویژ نل ایتھلیٹک چیمپئن شپ 2024  قائد ریزیڈنسی زیارت میں پروقار تقریب کا انعقاد   روڈ سیفٹی آگہی ہفتہ اورروڈ سیفٹی ورکشاپ  پی این فری میڈیکل کیمپس پاک فوج اور رائل سعودی لینڈ فورسز کی مظفر گڑھ فیلڈ فائرنگ رینجز میں مشترکہ فوجی مشقیں طلباء و طالبات کا ایک دن فوج کے ساتھ روشن مستقبل کا سفر سی پیک اور پاکستانی معیشت کشمیر کا پاکستان سے ابدی رشتہ ہے میر علی شمالی وزیرستان میں جام شہادت نوش کرنے والے وزیر اعظم شہباز شریف کا کابینہ کے اہم ارکان کے ہمراہ جنرل ہیڈ کوارٹرز  راولپنڈی کا دورہ  چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کی  ایس سی او ممبر ممالک کے سیمینار کے افتتاحی اجلاس میں شرکت  بحرین نیشنل گارڈ کے کمانڈر ایچ آر ایچ کی جوائنٹ سٹاف ہیڈ کوارٹرز راولپنڈی میں چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کمیٹی سے ملاقات  سعودی عرب کے وزیر دفاع کی یوم پاکستان میں شرکت اور آرمی چیف سے ملاقات  چیف آف آرمی سٹاف کا ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا کا دورہ  آرمی چیف کا بلوچستان کے ضلع آواران کا دورہ  پاک فوج کی جانب سے خیبر، سوات، کما نڈر پشاور کورکا بنوں(جا نی خیل)اور ضلع شمالی وزیرستان کادورہ ڈاکیارڈ میں جدید پورٹل کرین کا افتتاح سائبر مشق کا انعقاد اٹلی کے وفد کا دورہ ٔ  ائیر ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد  ملٹری کالج سوئی بلوچستان میں بلوچ کلچر ڈے کا انعقاد جشن بہاراں اوکاڑہ گیریژن-    2024 غازی یونیورسٹی ڈیرہ غازی خان کے طلباء اور فیکلٹی کا ملتان گیریژن کا دورہ پاک فوج کی جانب سے مظفر گڑھ میں فری میڈیکل کیمپ کا انعقاد پہلی یوم پاکستان پریڈ انتشار سے استحکام تک کا سفر خون شہداء مقدم ہے انتہا پسندی اور دہشت گردی کا ریاستی چیلنج بے لگام سوشل میڈیا اور ڈس انفارمیشن  سوشل میڈیا۔ قومی و ملکی ترقی میں مثبت کردار ادا کر سکتا ہے تحریک ''انڈیا آئوٹ'' بھارت کی علاقائی بالادستی کا خواب چکنا چور بھارت کا اعتراف جرم اور دہشت گردی کی سرپرستی  بھارتی عزائم ۔۔۔ عالمی امن کے لیے آزمائش !  وفا جن کی وراثت ہو مودی کے بھارت میں کسان سراپا احتجاج پاک سعودی دوستی کی نئی جہتیں آزاد کشمیر میں سعودی تعاون سے جاری منصوبے پاسبان حریت پاکستان میں زرعی انقلاب اور اسکے ثمرات بلوچستان: تعلیم کے فروغ میں کیڈٹ کالجوں کا کردار ماحولیاتی تبدیلیاں اور انسانی صحت گمنام سپاہی  شہ پر شہیدوں کے لہو سے جو زمیں سیراب ہوتی ہے امن کے سفیر دنیا میں قیام امن کے لیے پاکستانی امن دستوں کی خدمات  ہیں تلخ بہت بندئہ مزدور کے اوقات سرمایہ و محنت گلگت بلتستان کی دیومالائی سرزمین بلوچستان کے تاریخی ،تہذیبی وسیاحتی مقامات یادیں پی اے ایف اکیڈمی اصغر خان میں 149ویں جی ڈی (پی)، 95ویں انجینئرنگ، 105ویں ایئر ڈیفنس، 25ویں اے اینڈ ایس ڈی، آٹھویں لاگ اور 131ویں کمبیٹ سپورٹ کورسز کی گریجویشن تقریب  پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں 149ویں پی ایم اے لانگ کورس، 14ویں مجاہد کورس، 68ویں انٹیگریٹڈ کورس اور 23ویں لیڈی کیڈٹ کورس کے کیڈٹس کی پاسنگ آئوٹ پریڈ  ترک فوج کے چیف آف دی جنرل سٹاف کی جی ایچ کیومیں چیف آف آرمی سٹاف سے ملاقات  سعودی عرب کے وزیر خارجہ کی وفد کے ہمراہ آرمی چیف سے ملاقات کی گرین پاکستان انیشیٹو کانفرنس  چیف آف آرمی سٹاف نے فرنٹ لائن پر جوانوں کے ہمراہ نماز عید اداکی چیف آف آرمی سٹاف سے راولپنڈی میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی ملاقات چیف آف ترکش جنرل سٹاف کی سربراہ پاک فضائیہ سے ملاقات ساحلی مکینوں میں راشن کی تقسیم پشاور میں شمالی وزیرستان یوتھ کنونشن 2024 کا انعقاد ملٹری کالجز کے کیڈٹس کا دورہ قازقستان پاکستان آرمی ایتھلیٹکس چیمپیئن شپ 2023/24 مظفر گڑھ گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج کے طلباء اور فیکلٹی کا ملتان گیریژن کا دورہ   خوشحال پاکستان ایس آئی ایف سی کے منصوبوں میں غیرملکی سرمایہ کاری معاشی استحکام اورتیزرفتار ترقی کامنصوبہ اے پاک وطن خصوصی سرمایہ کاری سہولت کونسل (SIFC)کا قیام  ایک تاریخی سنگ میل  بہار آئی گرین پاکستان پروگرام: حال اور مستقبل ایس آئی ایف سی کے تحت آئی ٹی سیکٹر میں اقدامات قومی ترانہ ایس آئی  ایف سی کے تحت توانائی کے شعبے کی بحالی گرین پاکستان انیشیٹو بھارت کا کشمیر پر غا صبانہ قبضہ اور جبراً کشمیری تشخص کو مٹانے کی کوشش  بھارت کا انتخابی بخار اور علاقائی امن کو لاحق خطرات  میڈ اِن انڈیا کا خواب چکنا چور یوم تکبیر......دفاع ناقابل تسخیر منشیات کا تدارک  آنچ نہ آنے دیں گے وطن پر کبھی شہادت کی عظمت "زورآور سپاہی"  نغمہ خاندانی منصوبہ بندی  نگلیریا فائولیری (دماغ کھانے والا امیبا) سپہ گری پیشہ نہیں عبادت ہے افواجِ پاکستان کی محبت میں سرشار مجسمہ ساز بانگِ درا  __  مشاہیرِ ادب کی نظر میں  چُنج آپریشن۔ٹیٹوال سیکٹر جیمز ویب ٹیلی سکوپ اور کائنات کا آغاز سرمایۂ وطن راستے کا سراغ آزاد کشمیر کے شہدا اور غازیوں کو سلام  وزیراعظم  پاکستان لیاقت علی خان کا دورۂ کشمیر1949-  ترک لینڈ فورسز کے کمانڈرکی چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی سے ملاقات چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کاپاکستان نیوی وار کالج لاہور میں 53ویں پی این سٹاف کورس کے شرکا ء سے خطاب  کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے ،جنرل سید عاصم منیر چیف آف آرمی سٹاف کی ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کی وفات پر اظہار تعزیت پاکستان ہاکی ٹیم کی جنرل ہیڈ کوارٹرز راولپنڈی میں چیف آف آرمی سٹاف سے ملاقات باکسنگ لیجنڈ عامر خان اور مارشل آرٹس چیمپیئن شاہ زیب رند کی جنرل ہیڈ کوارٹرز میں آرمی چیف سے ملاقات  جنرل مائیکل ایرک کوریلا، کمانڈر یونائیٹڈ سٹیٹس(یو ایس)سینٹ کام کی جی ایچ کیو میں آرمی چیف سے ملاقات  ڈیفنس فورسز آسٹریلیا کے سربراہ جنرل اینگس جے کیمبل کی جنرل ہیڈکوارٹرز میں آرمی چیف سے ملاقات پاک فضائیہ کے سربراہ کا دورۂ عراق،اعلیٰ سطحی وفود سے ملاقات نیوی سیل کورس پاسنگ آئوٹ پریڈ پاکستان نیوی روشن جہانگیر خان سکواش کمپلیکس کے تربیت یافتہ کھلاڑی حذیفہ شاہد کی عالمی سطح پر کامیابی پی این فری میڈیکل  کیمپ کا انعقاد ڈائریکٹر جنرل ایچ آر ڈی کا دورۂ ملٹری کالج سوئی بلوچستان کمانڈر سدرن کمانڈ اورملتان کور کا النور اسپیشل چلڈرن سکول اوکاڑہ کا دورہ گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباد، لیہ کیمپس کے طلباء اور فیکلٹی کا ملتان گیریژن کا دورہ منگلا گریژن میں "ایک دن پاک فوج کے ساتھ" کا انعقاد یوتھ ایکسچینج پروگرام کے تحت نیپالی کیڈٹس کا ملٹری کالج مری کا دورہ تقریبِ تقسیمِ اعزازات شہدائے وطن کی یاد میں الحمرا آرٹس کونسل لاہور میں شاندار تقریب کمانڈر سدرن کمانڈ اورملتان کورکا خیر پور ٹامیوالی  کا دورہ مستحکم اور باوقار پاکستان سکیورٹی فورسز کی کارروائیوں اور قربانیوں کا سلسلہ سیاچن دہشت گردی کے سد ِباب کے لئے فورسزکا کردار سنو شہیدو افغان مہاجرین کی وطن واپسی، ایران بھی پاکستان کے نقش قدم پر  مقبوضہ کشمیر … شہادتوں کی لازوال داستان  معدنیات اور کان کنی کے شعبوں میں چینی فرم کی سرمایہ کاری مودی کو مختلف محاذوں پر ناکامی کا سامنا سوشل میڈیا کے مثبت اور درست استعمال کی اہمیت مدینے کی گلیوں موسمیاتی تبدیلی کے اثرات ماحولیاتی تغیر پاکستان کادفاعی بجٹ اورمفروضے عزم افواج پاکستان پاک بھارت دفاعی بجٹ ۲۵ - ۲۰۲۴ کا موازنہ  ریاستی سطح پر معاشی چیلنجز اور معاشی ترقی کی امنگ فوجی پاکستان کا آبی ذخائر کا تحفظ آبادی کا عالمی دن اور ہماری ذمہ داریاں بُجھ تو جاؤں گا مگر صبح کر جاؤں گا  شہید جاتے ہیں جنت کو ،گھر نہیں آتے ہم تجھ پہ لٹائیں تن من دھن بانگِ درا کا مہکتا ہوا نعتیہ رنگ  مکاتیب اقبال ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم ذرامظفر آباد تک ہم فوجی تھے ہیں اور رہیں گے راولپنڈی میں پاکستان آرمی میوزیم کا قیام۔1961 چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی کا ترکیہ کا سرکاری دورہ چیف آف ڈیفنس فورسز آسٹریلیا کی چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی سے ملاقات چیف آف آرمی سٹاف کا عیدالاضحی پردورۂ لائن آف کنٹرول  چیف آف آرمی سٹاف کی ضلع خیبر میں شہید جوانوں کی نماز جنازہ میں شرکت ایئر چیف کا کمانڈ اینڈ سٹاف کالج کوئٹہ کا دورہ کامسیٹس یونیورسٹی اسلام آبادکے ساہیوال کیمپس کی فیکلٹی اور طلباء کا اوکاڑہ گیریژن کا دورہ گوادر کے اساتذہ اورطلبہ کاپی این ایس شاہجہاں کا مطالعاتی دورہ سیلرز پاسنگ آئوٹ پریڈ کمانڈر پشاور کور کی دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کرنے والے انسداد دہشتگردی سکواڈ کے جوانوں سے ملاقات کما نڈر پشاور کور کا شمالی و جنوبی وزیرستان کے اضلاع اور چترال کادورہ کمانڈر سدرن کمانڈ اور ملتان کور کا واٹر مین شپ ٹریننگ کا دورہ کیڈٹ کالج اوکاڑہ کی فیکلٹی اور طلباء کا اوکاڑہ گیریژن کا دورہ انٹر سروسز باکسنگ چیمپیئن شپ 2024 پاک میرینز پاسنگ آؤٹ پریڈ 
Advertisements

ہلال اردو

بھارت میں مسلم خواتین نشانے پر ۔ مسلمانوں میں تشویش کی لہر

جون 2023

یہ گھر واپسی مہم کی جڑیں انڈین متعصب ہندو جماعتوں کی بیسویں صدی کے شروع میں چلائی جانے والی شدھی تحریک سے ملتی ہیں۔ مودی کی طرف سے ایسی قانون سازی کی جارہی ہے کہ جس کے تحت دوسرے مذاہب سے ہندو مذہب اختیار کرنے پر پابندی تو نہ ہو مگر ہندو مذہب سے کسی دوسرے مذہب کو اختیار کرنا جرم ہو یا اسے قانونی طور پر انتہائی مشکل بنا دیا جائے۔


بھارت کے آئین کو دیکھا جائے تو بظاہر ایک سیکولر ملک کے آئین کی طرح نظر آئے گا جہاںہرشخص کواپنی بات کہنے یامخالفت کرنے کاجمہوری حق عطاکیا گیا ہے۔ بھارت کے آئین میں بھارت میں بسنے والے تمام مذاہب کے ماننے والوں کواپنے مذہبی تشخص کے ساتھ جینے کا،مذہب پرآزادی کے ساتھ عمل کرنے کااورمذہبی ادارے چلانے اوران کی بقاوتحفظ کے برابرحقوق اس ہیں لیکن افسوس بھارت اس وقت انتہا پسندانہ نظریات والے حکمرانوں کے نرغے میں ہے جنھوں نے ملک کے آئین اور قانون کو پاؤں تلے روند کر ہندو توا کے ایجنڈے کو بڑھایا ہے۔ اس پر زیادہ افسوس بھارتی عدلیہ اور پارلیمنٹ پر ہے جو بھارتی حکمرانوں کے جرائم میں برابر کے شریک ہیں۔ گزشتہ چندبرسوں سے سیاسی مفادات کے حصول کی خاطرایک خاص طبقہ کے لوگ مسلمانوں اوران کے مذہبی شعائرکونشانہ بناکر بھارتی آئین وقانون کامذاق اڑارہے ہیں۔ اتناہی نہیں بلکہ اس کھیل میں اب حکومت کے ساتھ پارلیمنٹ، عدلیہ اور پولیس برابرکی شریک ہوگئی ہے۔طلاق ثلاثہ بل اسی کی ایک کڑی تھی۔ حکومت نے براہ راست شریعت اسلامی کونشانہ بناتے ہوئے جلدبازی میں اسے لوک سبھاسے پاس کرالیا۔ آل انڈیامسلم پرسنل لاء بورڈ ہمیشہ متحرک رہی ہے اورجب سے حکومت نے اس بل کامنصوبہ بنایاتھابورڈ نے اسی دن سے اس بل کی مخالفت میں اپنی تحریک شروع کردی تھی اوراسی تحریک کاایک نمونہ تھاکہ بورڈ نے پورے ملک میں بل کے خلاف دستخطی مہم چلائی اورتقریباًپانچ کروڑ مسلمانوں کے دستخطوں والی دستاویزات وزراتِ قانون، وزارت ِداخلہ، صدرجمہوریہ ہندو دیگر متعلقہ اداروں کوبھیجی گئی مگر افسوس کہ اس اہم اور خالصتاً اسلامی دینی معاملے پر ہندو حکومت نے اپنے نظریات مسلط کیے،صرف اسی پر بس نہیں، مسلم لڑکیوں کو حجاب کرنے اور اسلامی شعائر کی پابندی پر بھی تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ ان بچیوں کو زبردستی ہندو بنانے اور ان سے شادیاں رچانے کے لیے آر ایس ایس منصوبے کے تحت عمل پیرا ہے۔ ماہنامہ الفرقان لکھنؤ کے ایڈیٹر اور  بھارت کے ایک نامور بے باک مسلم لیڈر عالم دین مولانا خلیل الرحمن سجاد نعمانی جو آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ساتھ طویل عرصہ سے خدمات سرانجام دے رہے ہیں،کی حال ہی میں ایک دل ہلا دینے والی ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں مولانا خلیل سجاد نعمانی نے  نہایت افسوس ظاہر کیا ہے کہ پچھلے ایک سال میں 8 لاکھ مسلم لڑکیا ں زبردستی مرتد کی گئی ہیں اورمسلمان خاموش بے بس بیٹھے ہوئے ہیں۔ انہیں اپنی بچیوں کے ارتدادکی کوئی فکر نہیں ہے۔ مولانا نے کہا کہ کیا مسلمانوں کو اب بھی ساٹھ، ستر سال غفلت کی نیند سونے کی ضرورت ہے۔؟ حالیہ دنوں میں بھارت کے تمام رجسٹرار آف میرج کے دفاتر سے ہم نے وہاں کے نوٹس بورڈ کا سروے کروایا ہے
 جس کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے کہ بھارت کی 8 لاکھ مسلم لڑکیاں 1 سال میں مرتد ہوئی ہیں اوروہ ہندو لڑکوں کے ساتھ شادی رچا چکی ہیں۔ یہ بات افسوسناک ہے اور ہمیں اس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ محض جمعہ کی نماز اداکرلینے، روزے رکھ لینے سے پکے مسلمان نہیں بن سکتے۔ 
 بھارت میں 28 ریاستیں ہیں، 748 اضلاع ہیں، ان میں سے 5650 تعلقہ جات ہیں اس لحاظ سے کم وبیش 5 ہزار سے زیادہ میرج رجسٹریشن آفیس بھارت میں موجود ہیں۔ مولانا نے ہر ریاست میں ضلعی اور تحصیل سطح پر مسجد اور کمیونٹی کی سطح پر یہ سروے کروایا اور بھارت کے سیکولر دعوؤں کی قلعی کھولی ہے جو کہ انتہائی کربناک اور امت مسلمہ کے لیے لمحہ فکریہ بھی ہے۔ مودی حکومت پورے  بھارت میں آر ایس ایس کی حلیف ذیلی تنظیموں کے ذریعے مسلم لڑکیوں کو مختلف ہتھکنڈے استعمال کرکے غیر مسلم لڑکوں سے شادی کرنے پر اکسا رہی ہے۔ اس مہم میں ہندو لڑکوں کو کامیاب کرنے کے لیے خطیر رقم دی جاتی ہے تاکہ وہ انہیں محبت کے جال میں پھنسانے اور اپنی خلوت گاہ تک لے جانے میں کامیاب ہوجائیں اور پھر بلیک میلنگ کا دروازہ کھول کر ارتداد کی راہ ہموار کی جاسکے۔بھارت کے مختلف حصوں مثلاً ممبئی،آگرہ، یوپی، جھار کھنڈ،  دہلی اور بہار کے بہت سارے اضلاع سے اس قسم کی تشویشناک، المناک اور پریشان کن خبر ہر دن موصول ہو رہی ہے۔ اس طرح ان لڑکیوں کو دین وایمان سے بے زار کرکے ہندو مذہب میں داخل کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ مسلم لڑکوں پر روزگار اور سرکاری ملازمتوں کے دروازے بند ہیںجس کی اصل وجہ مسلم لڑکیوں پر فوکس کرنا ہے۔ مسلمان لڑکیاں ان کے جال میں جن وجوہات سے پھنستی ہیں، ان میں ایک بڑا سبب اختلاط مرد وزن ہے، یہ اختلاط تعلیمی سطح پر بھی ہے اور ملازمت کی سطح پر بھی کوچنگ کلاسز میں بھی پایا جاتا ہے اور ہوسٹلز میں بھی، موبائل انٹرنیٹ، سوشل میڈیا کے ذریعہ یہ اختلاط زمان ومکان کے حدود وقیود سے بھی آزاد ہو گیا ہے۔ارتداد کی اس نئی لہر سے ہر ایمان والے کا بے کل اور بے چین ہونا فطری ہے، بی جے پی حکومت اور نریندر مودی کے دوبارہ وزیر اعظم بننے کے بعد انڈیا میں موجود اقلیتوں پر تشدد، دھمکانا، ان کو ہراساں کرنا اور ہجوم کے تشدد میں بہت اضافہ ہوا ہے۔ گائے کو جواز بناکر دلت اور مسلمانوں کو زدوکوب کیا جاتا ہے، بعض اوقات انہیں جان سے مار دیا جاتا ہے۔ ہجوم اکھٹا ہوکر اقلیتی افراد کو مارتا ہے اور ان کو جے شری رام کے نعرے لگانے پر مجبور کرتا ہے۔خواتین اور بچوں پر جنسی حملوں میں اضافہ ہواہے۔ مذہبی عدم رواداری، منافرت اور انتہا پسندی کے بعد انڈیا کے بارے میں یہ کہنا غلط نہیں ہوگا کہ اس وقت انڈیا میں اقلیتوں سے زیادہ گائے محفوظ ہے۔
 مودی کے اقتدارمیں آنے کے بعدبھارت کاچہرہ تیزی سے ایک متعصب تنگ نظر اور تشدد پسند ہندو ریاست میں تبدیل ہو رہا ہے، تنگ نظر ہندو ازم کا زہر پوری ریاست میں پھیل رہا ہے اور اقلیتوں کو مختلف ہتھکنڈوں سے ختم کیاجارہاہے۔ عیسائیوں، مسلمانوں اور سکھوں کو یہ کہہ کر ان کا استحصال کیا جا رہا ہے کہ وہ اپنی اپنی ریاستوں میں چلے جائیں کیونکہ بھارت صرف ہندوئوں کی سرز مین ہے۔


 مودی مسلم کش اقدامات پرمعروف اسکالر پروفیسر نوم چومسکی نے گزشتہ سال ایک سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے کہاتھا کہ بھارت نے مسلمانوں کو مظلوم اقلیت میں تبدیل کردیا ہے۔ اسلامو فوبیا کے رجحان میں جہاں پورے مغرب میں اضافہ ہو رہا ہے وہیں بھارت میں یہ اپنی مہلک ترین شکل اختیار کر رہا ہے۔


 امریکی محکمہ خارجہ نے 20 مارچ کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق اپنی سالانہ رپورٹ میں کہاہے کہ بھارت میں انسانی حقوق کی شدید خلاف ورزیاں ہورہی ہیں۔ مودی حکومت ایسے مسلمانوں کو خاص طور پر نشانہ بنا رہی ہے جو حکومت پر نکتہ چینی کرتے ہیں اور ان کے گھروں اور معاش کو تباہ کرنے کے لیے بلڈوزر کا استعمال کر رہی ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ بھارتی حکومت کی پالیسیاں اور اقدامات مسلمانوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ ہندو قوم پرست حکمران جماعت نے2014میں اقتدار میں آنے کے بعد سے ہی معاشرے کو مذہبی خطوط پر تقسیم کرنے کے عمل کو فروغ دیا ہے۔  یونائیٹڈ سٹیٹس کمیشن آن انٹرنیشنل ریلیجئیس فریڈم (یو ایس سی آئی آر ایف) نے اپنی سالانہ رپورٹ میں کہاہے کہ بھارت میں مذہبی آزادی میں نمایاں کمی آئی ہے۔ ہندو قوم پرست ایجنڈے کو فروغ دینے والی پالیسیاں مسلمانوں، عیسائیوں، سکھوں، دلتوں اور دیگر مذہبی اقلیتوں کو بری طرح متاثر کر رہی ہیں۔ اسی طرح انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل کی سٹیٹ آف دی ورلڈ ہیومین رائٹس 2022-23کے عنوان سے جاری رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ بھارتی حکومت اقلیتوں کو خاموش کرانے کے لیے انسداد دہشت گردی اورمنی لانڈرنگ قوانین استعمال کررہی ہے۔ ہندوتواتنظیموں کومسلم خاندانوں کے گھروں اور کاروبار مسمار کرنے میں مکمل حکومتی سرپرستی حا صل ہے۔ بھارتی انتہا پسند ہندوؤں کی جانب سے گھرواپسی مہم کے نام پرلوگوں کو خوف، دھونس، مالی لالچ اور ہر ممکن طریقہ کار استعمال کرکے ہندو بنایاجارہا ہے۔یہ گھر واپسی مہم کی جڑیں انڈین متعصب ہندو جماعتوں کی بیسویں صدی کے شروع میں چلائی جانے والی شدھی تحریک سے ملتی ہیں۔ مودی کی طرف سے ایسی قانون سازی کی جارہی ہے کہ جس کے تحت دوسرے مذاہب سے ہندو مذہب اختیار کرنے پر پابندی تو نہ ہو مگر ہندو مذہب سے کسی دوسرے مذہب کو اختیار کرنا جرم ہو یا اسے قانونی طور پر انتہائی مشکل بنا دیا جائے۔


ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ بھارتی حکومت کی پالیسیاں اور اقدامات مسلمانوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ ہندو قوم پرست حکمران جماعت نے2014میں اقتدار میں آنے کے بعد سے ہی معاشرے کو مذہبی خطوط پر تقسیم کرنے کے عمل کو فروغ دیا ہے۔  یونائیٹڈ سٹیٹس کمیشن آن انٹرنیشنل ریلیجئیس فریڈم (یو ایس سی آئی آر ایف) نے اپنی سالانہ رپورٹ میں کہاہے کہ بھارت میں مذہبی آزادی میں نمایاں کمی آئی ہے۔ ہندو قوم پرست ایجنڈے کو فروغ دینے والی پالیسیاں مسلمانوں، عیسائیوں، سکھوں، دلتوں اور دیگر مذہبی اقلیتوں کو بری طرح متاثر کر رہی ہیں۔


 مودی مسلم کش اقدامات پرمعروف اسکالر پروفیسر نوم چومسکی نے گزشتہ سال ایک سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے کہاتھا کہ بھارت نے مسلمانوں کو مظلوم اقلیت میں تبدیل کردیا ہے۔ اسلامو فوبیا کے رجحان میں جہاں پورے مغرب میں اضافہ ہو رہا ہے وہیں بھارت میں یہ اپنی مہلک ترین شکل اختیار کر رہا ہے۔  بھارت کی انسانی حقوق کی تنظیم سٹیزن فار جسٹس اینڈ پیس (سی جے پی)نے سال 2022  کو بھارت میں مذہبی اقلیتوں کے خلاف نفرت، امتیازی سلوک اور ظلم و تشدد کا سال قرار دیتے ہوئے کہاتھا کہ بھارت میں اقلیتوں کے خلاف امتیازی سلوک ریاستی سرپرستی میں ہوئے، بھارت میں اقلیتوں کے خلاف مظالم کرنے والے عناصر کی ریاستی سطح پر حوصلہ افزائی کی گئی۔ مودی سرکارکی طرف سے اقلیتوں کے خلاف مظالم دراصل اس ایجنڈے کی تکمیل ہے جس کی طرف چنددن قبل راجہ سنگھ نے ریاست مہاراشٹرا کے علاقے احمد نگر میں خطاب کرتے ہوئے کیاہے کہ بھارت 2026تک ہندوراشٹر بن جائے گا۔ اگر50سے زائد اسلامی ممالک اور 150سے زائد عیسائی ممالک ہوسکتے ہیں توبھارت کو ہندو راشٹرا کیو ں نہیں قرار دیا جاسکتا؟  اب  اس  خطرناک فتنے کا تدارک کسی ایک عالم دین اور تنظیم کے بس میں نہیں ہے، اس کے لیے بھارت کے تمام مسلم رہنمائوں اور علماء کو بھارت کے اس جبر کے خلاف اٹھنا ہوگا۔ گاؤں اور محلے کے مسلم اور غیر مسلم دانشورسر جوڑ کر بیٹھیں، اس لیے کہ اس مسئلہ سے سماج میں تناؤ پیدا اور فرقہ ورانہ ہم آہنگی کو نقصان پہنچتا ہے، جب تک بھارت کے محکوم مسلمانوں میں  بیداری پیدا نہیں ہوگی، یہ مسائل رہیں گے مسلم  خواتین کے بڑے اجتماعات ہونے چاہئیں جہاں آر ایس ایس کی ارتدای مہم سے آگاہ کرنے کے ساتھ انہیں اس راہ پر بڑھنے کے دنیوی اور اخروی نقصانات کو تفصیل سے جوڑا جائے،مسلم گھرانوں کے اندرونی حالات پربھی نگاہ رکھی جائے مگر ان سب کے ساتھ ان مسلم زعما کو، عیسائیوں اور دیگر اقلیتی مذاہب کے ساتھ مل کر ارتداد کے خلاف منظم مہم چلانا ہوگی۔ ||


مضمون نگار ایک کشمیری صحافی اور تجزیہ نگارہیں جو مظفرآباد سے شائع ہونے والے ایک روزنامہ کے ایڈیٹر ہیں۔ 
 ۔[email protected]