اداریہ

-بقائے وطن

وطنِ عزیز پاکستان تحفۂ خداوندی ہے جس سے قوم والہانہ محبت کرتی ہے اور اس کی حفاظت کے لئے جانوں کے نذرانے پیش کرنے سے بھی دریغ نہیں کرتی۔ قیامِ پاکستان کے اوائل ہی سے پاکستان کو دشمن کی سازشوں اور جارحیت کا سامنا کرنا پڑا لیکن پیشہ ورانہ اہلیت کی حامل مسلح افواج اور غیور عوام نے ہمیشہ اُن کا منہ توڑ جواب دیا۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں جس طرح عوام اپنی افواج کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہوگئے اس کی مثال نہیں ملتی۔آج پاکستان کو اُس طرح سے دہشت گردی اور شدت پسندی کا خطرہ نہیں جو گزشتہ ڈیڑھ دہائی میں موجود رہاہے۔2017 میں شروع کئے گئے آپریشن رد الفساد کے ذریعے عوام اور شہری علاقوں میں چھپے بیٹھے دہشت گردوں کا نہ صرف سراغ لگایا گیا بلکہ ان کے سہولت کاروں کی سرکوبی کے لئے بھی اقدامات عمل میں لائے گئے۔ 
 آج پاکستان کی مغربی سرحدیں کافی حد تک محفوظ ہو چکی ہیں۔ مغربی سرحد پر باڑ کا کام تقریباً مکمل ہو چکا ہے۔ مشرقی سرحدوں پر بھی افواجِ پاکستان تندہی اور بہادری سے موجود ہیں اور دشمن کی چالوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ بوقت ضرورت دشمن کی کسی بھی مہم جوئی کا منہ توڑ جواب دیا جاتا ہے۔ افغانستان سے امریکی و اتحادی افواج کے انخلاء کے بعد بھی پاکستان نے ہر وہ قدم اٹھایا جو اس کی ریاست اور عوام کے لئے ضروری تھا۔ پاکستان ساری صورت حال کو انتہائی ذمہ دارانہ انداز میں دیکھ رہا  ہے اورمؤثر اقدامات اٹھارہا ہے۔ یقینا پاکستان کو مختلف محاذوں پر چیلنجز کا سامنا ہے۔ مشکلات بھی ہیں،جنہیں عوام باہم مل کر حل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ 
بانیٔ پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح نے1936 میں طلباء سے اپنے ایک خطاب میں کہا تھا: '' آپ اچانک ایک نئی دُنیا تخلیق نہیں کرسکتے۔ حصولِ آزادی کے لئے آپ کو ایک عمل سے گزرنا ہوگا۔ آپ کو آگ کے دریا ، آزمائشوں اور قربانیوں کی راہ سے گزرنا پڑے گا۔ مایوس نہ ہوں۔ قومیں ایک دن میں نہیں بنا کرتیں لیکن جیسا کہ ہم رواں دواں ہیں، ہمیں ایسے اقدامات اٹھانے چاہئیں جو ہمیں آگے کی طرف لے کر جائیں۔'' یقینا قائد کے فرمان کی روح یہ ہے کہ پُرعزم قوم کے قدم کبھی بھی لغزش نہیں کھاتے وہ اپنا سفر جاری رکھتے ہیں اور کامیابی اُن کے قدم چومتی ہے۔ شاعرِ مشرق علامہ محمداقبال نے بھی اپنی شاعری میں قوم کو خودی، ثابت قدمی، جستجو، لگن اور اپنی تہذیب پر فخر کرتے ہوئے آگے بڑھنے کا پیغام دیا ہے۔ انہوں نے اپنی شاعری میں قوم کے ہر فرد کو اپنے حصے کا کردار ادا کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے اور اُنہیں ملت کے مقدر کا ستارہ قرار دیا ہے۔ ہماری قوم بلاشبہ اقبال کے افکار کی عملی تصویر ہے۔  الحمدﷲ افواجِ پاکستان اور پوری قوم یک جان ہو کردفاعِ وطن کو ہر قیمت پر یقینی بنائیں گے اور وہ وقت دُور نہیں جب پاکستان خوشحالی ، ترقی اور وقار کی علامت بن کر دنیا کے سامنے اُبھرے گا۔ پاکستان ہمیشہ زندہ باد!
 

یہ تحریر 44مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP