ہلال نیوز

یومِ استحصالِ کشمیر

5 اگست 2019ء کو بھارت کے یک طرفہ اور غیر قانونی اقدام کے خلاف برطانیہ، امریکہ، جرمنی سمیت دنیا بھر میں یومِ استحصال کشمیر منایا گیا۔ بھارتی جارحیت، انڈین آرمی کے جبر، ظلم وستم اور مظلوم کشمیریوں کے ساتھ اظہارِ یک جہتی کے لئے 5 اگست 2020ء کو پاکستانی عوام نے کشمیرکے لئے جاری اپنی غیر متزلزل حمایت کا یقین دلایا۔ ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے ہوئے اور ریلیاں نکالی گئیں۔



جنت نظیروادی میں بھارتی حکومت اورفوج کی جانب سے جبری پابندیوں اور غیر انسانی سلوک کے ایک سال مکمل ہونے پر یومِ استحصال کے دن سندھ میں بھی کشمیریوں پر مظالم کے بینرز اور پینا فلیکس کے ذریعے تصویر کشی کی گئی۔ بینرز کے ذریعے پاکستانی عوام نے اپنی کشمیری بہنوں اور بھائیوں کو پیغام دیا کہ مشکل کی ہر گھڑی میں وہ اُن کے ساتھ ہیں۔ اس دن کی مناسبت سے ملیر چھائونی کراچی میں ریلی کا اہتمام کیا گیا۔ ریلی میں بھارتی ظلم و ستم اور کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے غیر آئینی اور غیراخلاقی اقدام کو بینرز، پلے کارڈز کے ذریعے نمایاں کیا گیا اور شرکاء نے اس عزم کا اظہار کیا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں عوام پر جاری ظلم و ستم پر خاموش نہیں ہے اور اُن کی سیاسی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا اور آزادی کے حصول تک ہر ممکن جدوجہد میں کشمیری عوام کے ساتھ ہے۔ ریلی میں ریٹائرڈ آرمڈ فورسز افسران، سول سوسائٹی کے نمائندوں، عمائدین شہر، خواتین اور بچوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔
(رپورٹ : میجر کلیم)



 

یہ تحریر 22مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP