ہلال نیوز

ہیڈکوارٹر ایف سی ساؤتھ اور سیکٹرہیڈکوارٹر ساؤتھ ٹانک ،مقامی عوام کی خدمت میں پیش پیش

عالمی وباء کرونا کے پھیلاؤ کے دوران افواجِ پاکستان ملک کے کونے کونے میں اپنی عوام کی امداد اور ان کو کرونا وباء سے محفوظ رکھنے کے لئے متعلقہ اداروں کے ساتھ مل کر اور ان کے تعاون کو یقینی بناتے ہوئے تمام تروسائل کو بروئے کار لائی۔ ملک کے دیگر حصوں کی طرح ٹانک میں بھی ایف سی ہیڈ کوارٹر ساؤتھ اور سیکٹر ہیڈ کوارٹر ٹانک کی کاوشوں سے انسانی ہمدردی کے تحت کرونا کے دنوں سے لے کر اب تک سات ہزار سے زائد ایسے خاندانوں کو راشن فراہم کیاگیا۔ ان خاندانوں میں بعض ایسے خاندان بھی شامل تھے جو سفید پوش تھے اور کرونا لاک ڈاؤن کے دوران بری طرح متاثر ہوئے تھے لیکن سفید پوشی کی وجہ سے وہ ایسے حالات میں کسی سے کچھ مانگ بھی نہیں سکتے تھے۔ سیکٹر ہیڈ کوارٹر ساؤتھ نے اپنی مدد آپ کے تحت اپنے جوانوں اور افسران کا جمع ہونے والا راشن مستحق اور معذور افراد میں ان کے گھروں کی دہلیز پر جا کر تقسیم کیاجو کہ حقیقت میں قابل ستائش اقدام تھا جبکہ اس کے علاوہ یتیم،بے سہارہ، اوربیوہ عورتوں کے ساتھ مالی تعاون بھی کیاگیا اور ان کے لئے ماہانہ وظائف بھی مقرر کئے گئے۔ سیکٹر کمانڈر ساؤتھ نے ایف سی ہیڈکوارٹر کے تعاون سے بیوہ اور معذور افراد کو ان کے اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے اور انہیں با عزت روزگار کے قابل بنانے کے لئے سلائی مشینیں فراہم کیں تاکہ وہ کسی کے سامنے ہاتھ پھیلائے بغیر اپنا حلال روزگار کما سکیں۔ مشکل کے ان دنوں میں حکومتی احساس کفالت پروگرام کی امدادی رقم کی مستحق افراد میں تقسیم کو یقینی بنانے کے لئے ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مل کر سیکٹر کمانڈر ساؤتھ کی براہ راست نگرانی میں (405.444)ملین روپے کی خطیر رقم حکومتی پالیسی کے مطابق مستحق اور غریب افراد میں تقسیم کی جا چکی ہے۔ ٹانک جیسے علاقے میں اتنی خطیر رقم کا حکومتی پالیسی میں تقسیم ہونے کا سہرہ سیکٹر ہیڈ کوارٹر ساؤتھ کے کمانڈر اورضلعی انتظامیہ کے سر جا تا ہے۔ پاکستان ابھی تک کرونا جیسی قدرتی آفت کے خلاف نبرد آزما ہے اس دوران پاک آرمی سمیت ملک کے د یگر ادارے اپنی عوام کو اس بیماری  کے اثرات سے بچانے کے لئے دن رات ایک کر کے کام کر رہے ہیں لیکن دیکھتے ہی دیکھتے ملک میں دوسری بڑی قدرتی آفتِ ٹڈی دَل سامنے آگئی جس نے ملک میں زرعی اجناس کو بری طرح نقصان پہنچایا اور ہمارے ملک کے زمیندار ٹڈی دَل کے حملوں سے شدید متاثر ہوئے۔ اس مرتبہ بھی افواج پاکستان نے دیگر اداروں کے ساتھ مل کر ٹڈی دَل کے حملوں کا مقابلہ کرنے کے لئے خصوصی اور مؤ ثراقدامات کئے۔ ٹانک میں بھی ٹڈی دل حملوں نے زرعی اجناس کو متاثر کیا جس پر قومی ذمہ داری کا ثبوت دیتے ہوئے سیکٹر کمانڈر ساؤتھ بریگیڈیر نیک نام نے ٹا نک میں تعینات تمام آرمی اور ایف سی کی یونٹس کو متعلقہ اداروں اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مل کر اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی جس کے بعد علاقے کے زمینداروں کو اور فصلوں کو نقصان سے بچانے کے لئے ایف سی اور پاک آرمی نے ٹڈی دَل کے حملوں کو کنٹرول کرنے کے لئے کیمیکل آپریشن شروع کئے۔ ان مشترکہ آپریشنوں کے دوران محکمہ زراعت ٹانک کے سپرے کرنے والے عملے کو ایف سی اور پاک آرمی کی  جانب سے فول پروف سیکورٹی فراہم کی گئی تھی اس میں ٹوٹل سر ویڈ ایریا(341,880ha) تھا اور وہ علاقے جن میں سپرے کیا گیا وہ (9267ha) تھا کل 92 چھڑکائو آپریشن کئے گئے مذکورہ آفت سے نمٹنے کے لئے کسی بھی ہنگامی صورتحال میں سیکٹر ہیڈ کوارٹر نے ایف سی اور پاک فوج کے جوانوں کو تربیت فراہم کرنے کے لئے اقدامات کئے تاکہ ٹڈی دَل کے حملوں کی صورت میں ایف سی اور پاک فوج کے جوان بھی ضلعی انتظامیہ اور محکمہ زراعت کے ساتھ مل کر مؤثر اقدامات اٹھا سکیں۔ سیکٹر ہیڈ کوارٹر،محکمہ زراعت ٹانک اور ضلعی انتظامیہ کے بروقت اقدام سے زرعی اجناس کو پہنچنے والے نقصان سے بچا لیا گیا۔ جس پر زمینداروں نے خوشی کا اظہار کیا ٹڈی دَل کے خلاف ہونے والے آپریشنوں کے دوران محکمہ زراعت ٹانک کے ڈسٹرکٹ ڈائریکٹر آفیسر ڈاکٹر انور کا کردار بھی مثالی رہا۔ زمینی حقائق کو اگر دیکھا جائے تو حالات جیسے بھی ہوں پاک فوج نے ہمیشہ ہر اول دستے کے کردار کو سچ کر کے دکھایاہے جو یقیناپاکستانی عوام کے لئے باعث فخر ہے۔



 

یہ تحریر 33مرتبہ پڑھی گئی۔

TOP