عید کے رنگ

عید کی خوشیاں اور سرحدوں پر تعینات قوم کے بیٹے

کبھی عید کا دن بڑی انوکھی خوشبوں کا مالک ہوتا تھا۔ مجھے یاد ہے کہ ہم کوشش کرتے تھے کہ ہم اپنے گھر جائیں اور اپنے عزیزوں کے ساتھ مل کر عید منائیں۔ اب تو عید کا دن چھٹی کے دن کی طرح گزر جاتا ہے مگر اکثر پُرانے کلچر کی خوشبوئیں اب بھی بہت جگہوں پر گھومتی پھرتی ہیں اور فطرت سے پیار کرنے والے لوگوں کو ڈھونڈتی ہیں۔ اب بھی بہت سارے لوگ گھروں میں عید مناتے ہیں، عزیزو اقارب اور دوست احباب کے درمیان خوشیاں بانٹتے ہیں۔ رمضان کے آخری دنوں میں بس سٹاپ اور ریلوے سٹیشن پر عورتوں ، مردوں اور بچوں کا اچھا خاصا ہجوم ہوتا ہے۔ جو اپنے گھروں کو جانے کے لئے بے تاب ہوتے ہیں۔ اپنوں کے ساتھ عید منانے کی خوشی بہت انوکھی اور بیش قیمت ہوتی ہے۔



ایسے میں مجھے ان لوگوں کا خیال آتا ہے جو جنگی محاذوں پر اپنے وطن کی حفاظت کے لئے مامور ہیں۔ گھر نہیں جاسکتے اور اپنے پیاروں کی جدائی میںخوشی کے لمحات بھی جدائی میں گزار دیتے ہیں۔ وہ لوگ عظیم ہیں اور خراجِ تحسین کے مستحق ہیں۔ ہم جب اپنے گھروں میں ایک رونق لگائے گپ شپ کرتے ہیں تو ہمارے مجاہد اور فوجی جوان اپنوں سے دُوراپنی مٹی کی محبت میں سارا وقت مجاہدانہ جذبے سے گزاررہے ہوتے ہیں۔ ہمیں ان بہادر سپاہیوں کے جذبوں کے بارے میں ضرور سوچنا چاہئے بلکہ یہ بات بھی ضروری ہے کہ ہم اُن کو ملنے کے لئے اگلے مورچوں پر جائیں اُن کے جذبے کو خراجِ تحسین پیش کریں اُنہیں سلام کریں۔ وہ ہمارے کل کے لئے اپنا آج قربان کئے ہوئے ہیں۔ ان کو بھی یہ گھروں کی رونقیں اور خوشیاں اچھی لگتی ہیں مگر انہوں نے اپنی خوشیاں ہماری خوشیوںکے لئے قربان کی ہوئی ہیں۔ وہ ہمارے محسن ہیں۔ ان موقعوں پر ہمیں اُنہیں یاد رکھنا چاہئے۔

ہم جب اپنے گھروں میں ایک رونق لگائے گپ شپ کرتے ہیں تو ہمارے مجاہد اور فوجی جوان اپنوں سے دُوراپنی مٹی کی محبت میں سارا وقت مجاہدانہ جذبے سے گزاررہے ہوتے ہیں۔ ہمیں ان بہادر سپاہیوں کے جذبوں کے بارے میں ضرور سوچنا چاہئے بلکہ یہ بات بھی ضروری ہے کہ ہم اُن کو ملنے کے لئے اگلے مورچوں پر جائیں اُن کے جذبے کو خراجِ تحسین پیش کریں اُنہیں سلام کریں۔ وہ ہمارے کل کے لئے اپنا آج قربان کئے ہوئے ہیں۔ ان کو بھی یہ گھروں کی رونقیں اور خوشیاں اچھی لگتی ہیں مگر انہوں نے اپنی خوشیاں ہماری خوشیوںکے لئے قربان کی ہوئی ہیں۔ وہ ہمارے محسن ہیں۔

ہماری قوم نے گزشتہ چند برسوں میں بہت مشکلات دیکھی ہیں۔ بڑے چیلنجز کا سامنا کیا ہے لیکن جب قوم ایک مٹھی کی مانند ہوجاتی ہے تو مشکلیں مشکلیں نہیں رہتیں۔ ایک وقت تھا کہ یوں لگتا تھا جیسے دہشت گردی کا عفریت ہمارے ہاں سے کبھی ختم نہیں ہوگا۔ لیکن جس طرح ہماری قوم اپنی افواج کے ساتھ کندھے سے کندھا ملا کر کھڑی ہوگئی، اس سے جو ممکن ہو پایاکیا اور ہمیں بتدریج دہشت گردی سے نجات ملی۔ قوم اور ہمارے فوجی جوان آج بھی اُسی وقار اور تندہی کے ساتھ ملک دشمنوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ آج الحمدﷲ پاکستان میں مجموعی طور پر امن و امان کی صورت حال بہت بہتر ہے۔ اس کے پیچھے بلاشبہ وہ قربانیاں ہیں جو اس قوم اور افواج ِ پاکستان نے دی ہیں۔ آج کا پاکستان سر اٹھا کر جینے والا پاکستان ہے۔ آج کا پاکستان ایسا پاکستان ہے جو پُرامن لوگوں کی سرزمین کہلاتا ہے۔ آج الحمدﷲ ہم اس قابل ہیں کہ ہماری قوم آزادی اور اپنی من مرضی کی زندگی جی رہی ہے۔ وہ خوشی سے اپنے مذہبی اور قومی تہوار مناتی ہے۔ عیدین پر پاکستان بھر میں بڑے بڑے اجتماعات ہوتے ہیں۔ لوگ ایک دوسرے سے گلے ملتے ہیں، دعائیں دیتے ہیں، نیک تمنائوں کا اظہار کرتے ہیں۔ اپنے رب کے حضور اپنے بچوں، اپنے خاندان کی سلامتی کی استدعا کرتے ہیں اور سب سے بڑھ کر اپنے ان جان سے پیارے بیٹوں اوربھائیوں کے لئے خیرو سلامتی مانگتے ہیں جو ایسی خوشی کی گھڑیوں میں اپنے بیوی بچوں اور والدین کے پاس نہیں ہوتے لیکن ہمیں ان کی موجودگی کا احساس  رہتا ہے یوں لگتا ہے وہ ہمارے ساتھ ہی ان خوشیوں میں شریک ہیںکہ اپنے گھروں سے ہزاروں میل دور مشرقی و مغربی محاذوں سمیت دیگر محاذوں پر ہمارے یہ پیارے بیٹے وطن کی سرحدوں کی نگہبانی جس بہادری اور جانفشانی سے کررہے ہوتے ہیں یہ ان کی بدولت ہے کہ ہم اپنے اپنے گھروں، شہروں ، صوبوں اور اپنے وطن میں کسی بھی مقام پرخوشیوں بھرے تہوار بغیر کسی خوف و خطرے کے منا رہے ہوتے ہیں۔
اس میں کوئی شک نہیں کہ ہر طرف نظر آنے والا امن اور سکون ہماری قوم کو پلیٹ میں رکھ کر نہیں ملا، اس کے لئے بہت بھاری قربانیاں دی ہیںہماری قوم اور جری سپوتوں نے۔ میری یہ عید اور میری یہ خوشیاں قوم کے جوانوں کے نام ہیں۔ اﷲ اس خوبصورت وطن کو ہمیشہ سلامت رکھے۔


 مضمون نگار ممتاز ادیب، شاعر ہیں۔ متعدد کتابوں کے مصنف ہیں اور ایک قومی اخبار کے لئے کالم لکھتے ہیں۔
 

یہ تحریر 62مرتبہ پڑھی گئی۔

Success/Error Message Goes Here
براہ مہربانی اکائونٹ میں لاگ ان ہو کر اپنی رائے کا اظہار کریں۔
Contact Us
  • Hilal Road, Rawalpindi, PK

  • +(92) 51-927-2866

  • [email protected]

  • [email protected]
Subscribe to Our Newsletter

Sign up for our newsletter and get the latest articles and news delivered to your inbox.

TOP