اداریہ

دِیاجلائے رکھنا ہے

قومیں باہمی اتحاد اور یگانگت کی بنیاد پر پنپتی ہیں۔ قوم کا ہر فرد اپنے اپنے حصے کا کام دلجمعی اور خوش دلی سے سرانجام دے تو معاشرہ خوب سے خوب ترکی طرف گامزن ہو جاتا ہے اور شاعرِمشرق علامہ محمد اقبال نے تو بہت پہلے یہ واضح کردیا تھا کہ اقوام کی تقدیر افراد کے ہاتھوں میں ہوا کرتی ہے۔ بانیٔ پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح، جن کا رواں برس دسمبر میں قوم143واںیومِ ولادت منا رہی ہے، نے بھی ہمیشہ کام ، کام اور صرف کام پر زور دیا۔ انہوں نے 17 اگست1947 کو اپنے ایک خطاب میں کہا  تھاکہ ''پاکستان کی سرزمین میں زبردست خزانے چھپے ہوئے ہیں۔ مگر اس کو ایک ایسا ملک بنانے کے لئے جو ایک مسلمان قوم کے رہنے سہنے کے لئے قابلِ قبول ہو، ہمیں اپنی قوت اور اپنی محنت کے زبردست ذخیرے کا ایک ایک ذرہ صرف کرنا پڑے گا اور مجھے اُمید ہے کہ تمام لوگ اس کی تعمیر میں دل و جان سے حصہ لیں گے۔''
اس لحاظ سے یہ ہمارا قومی فریضہ ہے کہ سب لوگ بحیثیت فرد اور قومی ادارے کے نہ صرف اپنے حصے  کا دیا جلائیں بلکہ اُس سے بڑھ کر قومی وملی خدمات سرانجام دیں تاکہ ہماری قوم بھی دیگر اقوام کی طرح ترقی اور وقار کی علامت بن کر اُبھرے۔ وطنِ عزیز پاکستان نے گزشتہ بہتّر برسوں  میں  یقینا بہت ترقی کی ہے اور مختلف شعبہ جات میں کامیابیاں سمیٹی ہیں۔ افواجِ پاکستان کا شمار بھی ملک کے اُن چند اداروں میں ہوتا ہے جنہوں نے قیامِ پاکستان سے لے کر اب تک ملک کی خدمت میں اہم کردار اداکیا ہے۔ افواجِ پاکستان نے نہ صرف یہ کہ ملکی سرحدوں کے دفاع کو ہمیشہ مستحکم رکھا اور کسی بھی جارحیت کی صورت میں دشمن کو منہ توڑ جواب دیا بلکہ جب بھی ملک کو زلزلوں، سیلاب اور دیگرقدرتی آفات کا سامنا کرنا پڑا، افواجِ پاکستان اپنے ہم وطنوں کی مدد کرنے کی ایک خوبصورت روایت کی پاس داری کی۔ اس کے علاوہ ملک کے دشوار گزار علاقوں میں مواصلاتی  نظام کو مؤثرطور پر بحال رکھنے میں بھی افواجِ پاکستان اہم کردار اداکرتی ہیں۔ دشوار گزار علاقوں میں انفرا سٹرکچر کی بحالی اور تعلیم  و صحت  سے متعلق سہولیات بہم پہنچانے میں افواج کا کردار ہمیشہ ہراول دستے کا رہا ہے۔ 
صرف یہی نہیں افواجِ پاکستان نے کھیل کے میدان میں بھی قوم کو بہترین کھلاڑی اور کامیابیاں دی ہیں۔ پاکستان ایئرفورس نے سکواش جیسے بین الاقوامی کھیل کی سرپرستی کی تو پاکستان نیوی نے کشتی رانی کے فروغ میں مثبت کردار ادا کیا۔ پاک فوج نے قوم کو بہترین کھلاڑی بالخصوص اتھلیٹ دیئے۔یوں پاکستان آرمی کی اتھلیٹکس ، کبڈی، کراٹے، باکسنگ اور دیگر کھیلوں میں نمایاں خدمات ہیں۔ جو قومیں کھیل اور کھیل کے میدان آباد رکھتی ہیں وہ یقینا ایک طرح سے صحت مند معاشرے کو فروغ دے رہی ہوتی ہیںکہ صحت مند جسم ہی صحت مند دماغ اور مثبت فکر کو جنم دیتا ہے۔ حال ہی میں پشاور میں ہونے والی نیشنل گیمز میں پاک آرمی نے اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے نیشنل چیمپئن شپ جیتی اور ٹرافی اٹھائی۔  یہاں یہ امر بھی قابلِ ذکر ہے کہ افواجِ پاکستان نے یہ روایت قیامِ پاکستان کے اوائل سے برقرار رکھی ہوئی ہے اور کھیلوں کے قومی مقابلوں میں ہمیشہ سے نمایاں کامیابیاں سیمٹی ہیں۔  دیگر قومی اداروں اور ریاست کی سطح پر بھی کھیلوں کے فروغ کے لئے اہم اقدامات کی ضرورت ہے۔ کیونکہ معاشرہ جس قدر صحت مند اور توانا ہوتاہے، قومی ترقی کی رفتار بھی اُسی انداز سے تیز تر ہوتی چلی جاتی ہے۔ آیئے! صحت مند معاشرے میں اپنا کردار ادا کریں کہ اپنے اپنے حصے کا دِیاجلا کر ہی قوم کومستحکم اور مضبوط بنایا جاسکتا ہے۔



 

یہ تحریر 98مرتبہ پڑھی گئی۔

Success/Error Message Goes Here
براہ مہربانی اکائونٹ میں لاگ ان ہو کر اپنی رائے کا اظہار کریں۔
Contact Us
  • Hilal Road, Rawalpindi, PK

  • +(92) 51-927-2866

  • [email protected]

  • [email protected]
Subscribe to Our Newsletter

Sign up for our newsletter and get the latest articles and news delivered to your inbox.

TOP