خصوصی رپوٹ

آئیں چلیں شہید کے گھر

6 ستمبروہ دن ہے جب افواج پاکستان نے پوری قوم کے شانہ بشانہ دشمن کی جارحیت کامنہ توڑ جواب دے کر واضح کر دیا کہ وطن کی حرمت کی حفاظت کے لئے ہم ہر لمحہ بیداراور تیار ہیں۔ ہر سال یوم دفاع و شہداء پاکستان اسی عہد کی تجدید کے ساتھ منایا جاتا ہے کہ ہم کوئی شہادت نہیں بھولے ۔ زندہ قومیں اپنے شہیدوں پر ناز کرتی ہیں۔ ان کے کارناموں اور قربانیوں سے اپنے جذبوں کو جلا بخشتی ہیں۔ اس سال بھی ملک بھر میں یوم دفاع و شہداء انتہائی جوش و خروش سے منایا گیا۔ مرکزی تقریب جنرل ہیڈکوارٹرز میں ہوئی جس میں شہداء کے لواحقین سمیت حاضرسروس اور ریٹائرڈافسروں اور جوانوں نے شرکت کی۔



بہرطور رواں برس جنرل ہیڈکوارٹرز میں ہونے والی تقریب محرم الحرام اور دیگر وجوہات کی بناء پر اس انداز سے منعقد نہیں کی گئی جس طرح سے کی جاتی ہے بہرکیف اس سال یومِ دفاع اس اعتبار سے منفرد اور پروقار رہا کہ ملک کے مختلف طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد جن میں سول و ملٹری آفیشلز بھی شامل تھے، نے شہداء کے گھروں میں جا کر اُن کے لواحقین سے ملاقات کی۔ یومِ دفاع 2019 کے دو تھیمز تھے جس میں پہلا تھیم ''آئیں چلیں شہید کے گھر اور دوسرا کشمیر بنے گا پاکستان '' تھا ۔اس سے یقینا ہماری قوم کے عزم اور اُن جذبوں کی عکاسی ہوتی ہے کہ یہ نہ تو اپنے ہیروز کو فراموش کرتی ہے اور نہ ہی اپنے مقاصد کو۔ کشمیر بنے گا پاکستان کا تھیم ہماری قوم کے اس عظیم موقف کی ترجمانی کرتا ہے جو وہ اپنے کشمیری بھائیوں اورکشمیر سے متعلق رکھتے ہیں۔ بلاشبہ یہ قوم وقت آنے پر اس سلسلے میں کسی بڑی سے بڑی قربانی سے بھی دریغ نہیں کرے گی۔



تقریب کے مہمان خصوصی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے یادگارِ شہداء پر حاضری دی ، پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی۔ اس میں شہداء کے لواحقین خصوصی طور پر مدعو تھے ۔تقریب کے آغاز میں قومی ترانہ پڑھا گیاجس پر تما م شرکاء تعظیماًکھڑے ہو گئے۔آئی ایس پی آر کی تیار کردہ ڈاکومنٹری دکھائی گئی۔شہیدوں کے گھر سے محاذ پر جانے ، جسد خاکی واپس آنے کے مناظر ۔ اس کے علاوہ کشمیر میں ظلم و ستم کی داستان کو بھی پیش کیا جس سے آرمی آڈیٹوریم میں موجود ہر شخص کی آنکھیں نم ہو گئیں۔ شہیدوں اور غازیوں کے اہلِ خانہ کی موجودگی نے ماحول کے وقار اور اعتبار میں اضافہ کر دیا۔
اس مختصر تقریب میں مہمان خصوصی آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے شہداء کے لواحقین کو مخاطب کر کے کہا کہ آپ کا حوصلہ دیکھ کر میرا اعتماد بڑھا ہے۔ پوری قوم شہداء کو سلام پیش کر تی ہے۔ آپ لوگوں سے بات چیت کرنا میرے لئے باعث فخر ہے۔ جب بھی کوئی مجھ سے پوچھتا ہے کہ اس ملک اور افواج پاکستان نے وہ کیا کام کیا ہے جو کوئی ملک یا افواج اتنی کامیابی سے نہیں کرپائے ۔تومیرا جواب ہوتا ہے کہ جب تک ہمارے پاس آپ جیسے والدین ہیں، جو ایسے بہادر جوان پیدا کرتے ہیں ،جو ملک پر جان نچھاور کرنے کے لئے ہمیشہ تیار رہتے ہیں تب تک پاکستان کو دنیا کی کوئی طاقت نقصان نہیں پہنچا سکتی اور یہی ہماری اصل طاقت ہے۔ قیامِ پاکستان سے بقائے پاکستان کا سفر ہمارے شہدا ء کی عظیم اور لازوال قربانیوں سے سجا ہو ا ہے ۔ 
انھوں نے مزیدکہاکہ آج پاکستان میں امن کی بہتر فضا ہے۔ پاکستان نے اپنی ذمہ داریاں بھرپور طریقے سے پوری کی ہیں۔اب اقوام عالم کی ذمہ داری ہے کہ انتہا پسندی کو عملی طور پر رد کرے۔ حالیہ برسوںمیں دہشت گردی کے خلاف ہماری کامیابیاں باقی دنیا کے لئے مثال ہیں۔یہ بہت طویل اور مشکل جنگ تھی لیکن ہمارے بہادر افسر اور جوان چٹان کی طرح ڈٹے رہے۔ وطن کی خاطر سینوں پر گولیاں کھائیں، اپنے اعضاء کی قربانی دی اور اپنا کل ہمارے آج کے لئے قربان کر دیا۔جب تک وطن کے یہ جان نثار موجود ہیں،پاکستان کو کوئی بھی میلی آنکھ سے نہیں دیکھ سکتا۔ان کا کہنا تھاکہ آج کا پر امن اور بدلتا ہوا پاکستان دنیا کے لئے امن، ترقی اور رواداری کا پیامبر ہے ۔ ایک پر امن، مضبوط اور ترقی یافتہ پاکستان ہماری منزل ہے، ہم اس منزل کی طرف پوری حکمت عملی اور بھرپور استقامت سے سفر جاری رکھے ہوئے ہیں۔ ہماری جنگ اب غربت، بے روزگاری، جہالت اور معاشی پسماندگی کے خلاف ہے تاکہ ہمارے شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہ جائیں۔


  


چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پر زور انداز میں واضح کیا کہ مسئلہِ کشمیر تکمیلِ پاکستان کا نامکمل ایجنڈا ہے ۔ اسے اقوا م متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہئے۔پاکستان کبھی بھی کشمیریوں کو تنہا اور حالات کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑے گا۔ ہم آخری گولی، آخری فوجی اور آخری سانس تک کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ پاکستانیوں اور کشمیریوں کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں۔کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے۔کشمیریوں پر ظلم ہمارے صبر کی آزمائش ہے ۔


   


6 ستمبر کوپاکستان کے عوام شہداء کے گھر پہنچے اوروطن کے لئے ان کی لازوال قربانی کو سلام عقیدت پیش کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے لواحقین کے جذبہ ایثار اور استقلال کو بھی خراجِ تحسین پیش کیا۔ اس طرح یومِ دفاع پر پوری قوم نے حب الوطنی اور اتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کرکے دشمنوں پر واضح کر دیا کہ وہ دفاع وطن کے لئے ہر قسم کی قربانی دینے کے لئے تیار ہیں۔ 


یہ تحریر 61مرتبہ پڑھی گئی۔

Success/Error Message Goes Here
براہ مہربانی اکائونٹ میں لاگ ان ہو کر اپنی رائے کا اظہار کریں۔
Contact Us
  • Hilal Road, Rawalpindi, PK

  • +(92) 51-927-2866

  • [email protected]

  • [email protected]
Subscribe to Our Newsletter

Sign up for our newsletter and get the latest articles and news delivered to your inbox.

TOP