ہلال نیوز

پبلک سکول اینڈ کالج سکردوــ گلگت  بلتستان کا عظیم علمی مینارہ

تحریر: لیفٹیننٹ کرنل خلیل احمد ،پرنسپل پبلک سکول اینڈ کالج سکردو  

گلگت  بلتستان کا شمار وطنِ عزیز پاکستان کے انتہائی حسین و جمیل اور دفاعی اہمیت کے حامل خطوں میں ہوتا ہے، جو دنیا کے تین عظیم پہاڑی سلسلوں، کوہ قراقرم ، کوہ ہمالیہ اور کوہ ہندوکش کے ملن پر واقع ہے۔ دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی کے ٹو اس کی عظمت کی امین ہے۔ جبکہ دنیا کا بلند ترین محاذ سیاچن بھی اس خطے کی دفاعی اہمیت کو مزید بڑھاتا ہے۔ قطبین کے بعد دنیا میں سب سے زیادہ صاف پانی کے ذخائر گلیشیئر کی صورت میں اسی خطے میں موجود ہیں اور انہی گلیشیئرز کے پگھلنے سے نکلنے والا شوریدہ سر ، لہراتا ،بل کھاتا دریائے شیوخ دریائے سندھ کا روپ دھار کر وطن کی مٹی کی پیاس بجھاتا ہے۔ اس خطے کے باسی بھی پاکستان کی سرحدوں کے محافظ ہیں اور پاک فوج کی عظمت کی علامت این ایل آئی اسی خطے کے سپوتوں کی رجمنٹ ہے۔ گلگت بلتستان انتظامی طور پر تین ڈویژنز اور دس اضلاع پر مشتمل ہے۔  بلتستان ڈویژن کا صدر مقام ضلع سکردو اپنے حسن و رعنائی کے سبب منفرد حیثیت کا حامل ہے۔ یہ علاقہ چاروں طرف سے فلک بوس پہاڑوں سے گِھرا ہوا، گلگت  بلتستان کا سب سے وسیع علاقہ ہے۔ سیاحوں کی جنت کہلانے والا مقام شنگریلا اور دنیا کی چھت دیوسائی خطے کے ماتھے کا جھومر ہیں۔ 
اس خطے کا دفاعی نظام ہو یا مواصلاتی نظام کی تنصیبات ہو ، معیاری تعلیمی اداروں کا قیام، طبی سہولتوں کی فراہمی کے لئے ہسپتالوں کا قیام ہو یا رابطہ سڑکوں کی تعمیر، پاکستان آرمی سب سے آگے نظر آتی ہے۔ وطن عزیز پاکستان کی قابل فخر فوج کی نگرانی میں چلنے والے اہم ترین اداروں میں پبلک سکول اینڈ کالج سکردو بھی سر فہرست ہے، جو کمیت اور کیفیت کے اعتبار سے  بلتستان کا سب سے بڑا تعلیمی ادارہ شمار ہوتا ہے۔ پبلک سکول اینڈ کالج سکردو کی، بطور انگلش میڈیم سکول کے، منظوری1987 میں اس وقت کے صدر پاکستان اور چیف آف آرمی سٹاف جناب جنرل محمد ضیاء الحق صاحب نے سکردو آمد کے موقع پر مقامی عمائدین کے مطالبہ پر دی۔ سکول کا آغاز اگست 1990 میں چند طلبائ، اساتذہ اور مختصر سی عمارت سے ہوا۔ پھر بتدریج اس کے طلبا  و طالبات، درجہ اور عمارت میں اضافہ ہوتا رہا۔ 1995 میں اس نے میٹرک کا جبکہ 1997میں انٹرمیڈیٹ کا درجہ حاصل کیا۔ 2009 میں بی ایس سی کی کلاسز کا اجراء ہوا اور 2017 میں پلے گروپ کا آغاز بھی ہوا۔ ایس ایس سی اور ایچ ایس ایس سی کے لئے کالج فیڈرل بورڈ اسلام آباد کے ساتھ ملحق ہے جبکہ بی اے اور بی ایس سی کا الحاق پنجاب یونیورسٹی لاہور کے ساتھ ہے۔ گزشتہ 28سال کے قلیل عرصے کی مسلسل ترقی کے بعد اس ادارے نے نہ صرف خواندگی کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا بلکہ معیاری تعلیم مہیا کرنے میں بھی کلیدی رہا ہے ۔ اس ادارے کے فارغ التحصیل طلباء و طالبات نہ صرف ملک کے اندر بلکہ بیرون ملک بھی مختلف شعبہ ہائے زندگی میں اعلیٰ عہدوں پر خدمات سر انجام دے رہے ہیں۔



اس وقت یہ ادارہ  بلتستان کا سب سے بڑا اور مثالی ادارہ بن چکا ہے۔  اس کا مجموی رقبہ 260کنال ہے جبکہ اس کی عمارت چار مختلف بلاک پر مشتمل ہے جس میں طلباء اور طالبات کے لئے تمام تر تعلیمی سہولیات الگ الگ ونگ میں موجود ہیں۔ 1990 سے تا حال کالج کا انتظام بطور پرنسپل پاک فوج کے حاضر سروس لیفٹیننٹ کرنل کے زیر نگرانی رہا جبکہ کالج کے نظام کو بہتر طریقے سے آرمی کی نگرانی میں چلانے کے لئے بورڈ آف گورنرز کا نظام بھی موجود ہے۔ جس کی سربراہی بطور چیئرمین بورڈ آف گورنرز 1990تا 2005کمانڈر 62 بریگیڈ کے پاس تھی جبکہ 2005 سے تاحال یہ سربراہی کمانڈر آرٹلری ایف سی این اے کے پاس ہے۔بورڈ میں تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی 12 سے 15اہم شخصیات شامل ہوتی ہیں۔ 
 پبلک سکول کالج اینڈسکردو میں نصابی و ہم نصابی سرگرمیا ں نہایت احسن طریقے سے انجام پذیر ہوتی ہیں ۔ رواں سال میں اس ادارے سے ایس ایس سی کے امتحانات میں مجموعی طور پر324 طلباء و طالبات نے شرکت کی اور نتیجہ 97.22 فی صد رہا جبکہ ایچ ایس ایس سی کے امتحانات میں مجموعی طور پر354 طلباء نے حصہ لیا اور نتائج 97.32فی صد رہے۔ یہ نتائج پبلک سکول کی تاریخ کا روشن باب ہیں۔رواں سال کالج ہٰذا کی طالبہ نے میٹرک میں  بلتستان بھر میں اول پوزیشن حاصل کی جبکہ اسی ادارے کی دو ہونہار طالبات نے انٹرمیڈیٹ میں  بلتستان بھر میں بالترتیب اول اور دوم پوزیشنز حاصل کیں۔ طلباء کی تعلیمی سرگرمیوں کے ساتھ ساتھ ہم نصابی سرگرمیوں کے ذریعے ان کی شخصیت سازی اور تربیت بھی اس ادارے کا خاصہ ہے۔ اس سلسلے میں آرٹس اور سائنس کے تخلیقی نمونوں کی نمائش، انٹر ہاؤس تقریری مقابلے، نعتیہ مقابلے، اردو اور انگریزی میں مضمون نویسی کے مقابلے، حسن قرأت کے مقابلے اور کوئز مقابلے وغیرہ شامل ہیں۔
ذہنی اور فکری تربیت کے ساتھ ساتھ جسمانی تربیت بھی کسی تعلیمی ادارے کا خاصہ ہوتی ہے اس سلسلے میں پبلک سکول اینڈ کالج میں ہر سال سپورٹس ویک کا اہتمام نہایت تزک و احتشام کے ساتھ کیا جاتا ہے۔ گزشتہ سالوں کی نسبت تاریخ میں سب سے شاندار طریقے سے رواں سال سپورٹس گالا ، سائنس وآرٹس کی نمائش اوریوم دفاع پاکستان کی تقریبات کا انعقاد ہوا۔ اس تقریب میں اعلیٰ سول و عسکری حکام نے بھی شرکت کی۔
 

Read 99 times


Share Your Thoughts

Success/Error Message Goes Here
Note: Please login to your account and leave your thoughts on this article.

TOP